Sunday, May 3, 2020

رمضان المبارک میں ستر ہزار کلمہ پڑھ کر ایصالِ ثواب کرنے کی فضیلت


رمضان المبارک میں ستر ہزار کلمہ پڑھ کر ایصالِ ثواب کرنے کی فضیلت 
ملا علی قاری ؒ نے مرقاۃ شرح مشکوٰۃ میں الشیخ محی الدین ابن العربی ؒ کے حوالے سے یہ حدیث نقل کی ہے کہ حضور ﷺ نے فرمایا کہ:   مَنْ قَالَ لَا اِلٰہَ اِلَّا اللّٰہْ سَبْعِیْنَ اَلْفًا غُفِرَ لَہٗ ط   جس شخص نے ستر ہزار مرتبہ لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ پڑھا ، اس کی مغفرت کردی جاتی ہے۔ اور اس حدیث کو ذکر کرنے کے بعد نقل فرمایا ہے کہ وَمَنْ قِیْلَ لَہٗ غُفِرَلَہٗ اَیْضاً اور کسی کو پڑھ کر ایصالِ ثواب کردیا جائے تو اس کی بھی مغفرت کردی جاتی ہے۔ اور دلیل میں یہ واقعہ نقل کی ہے کہ اُن کی خدمت میں ایک جوان آیا جو ولی اللہ تھا، کَانَ مَشْھُوْرًا بِالْکَشْف، اس کا کشف مشہور تھا، اس نے اچانک رونا شروع کردیا۔ شیخ ابن عربی نے پوچھا! مَا حَضَرَ بِبُکَا ئٍ، اے جوان کیوں روتا ہے؟ اس نے کہا ، انِّی اَراٰی اُمّیْ فِی الْعَذَابِ، میں اپنی ماں کو عذاب میں دیکھ رہا ہوں۔ شیخ ابن عربی  ؒ فرماتے ہیں   فَوھَبْتُ لَاُمِّہٖ ، میں نے اس کی ماں کو ستر ہزار لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ  کا ثواب ہدیہ کردیا اور دل میں اللہ سے بات کی کہ اے اللہ !  یہ جو میں نے ستر ہزار  لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ پڑھا ہے اور ابھی تک کسی کو ایصالِ ثوات نہیں کیا یہ اس جوان اللہ والے کی ماں کو عطا رکردے۔  فَضَحِکَ الشَّابُّ، بس وہ جو ان ہنسا حالانکہ شیخ کی زبان ابھی ہلی نہیں تھی، دل میں اللہ تعالیٰ سے سودا کیا تھا لیکن چونکہ اس جوان کا کشف بہت مشہور تھا تو وہ فوراً ہنسا۔ شیخ نے پوچھا لَااِلٰہ  مَاھٰذا الضِّحْکُ،کیو ں ہنستے ہو؟ اس نے کہا ! اِنِّیْ اَرٰی اُمِّیْ فِیْ حُسْنِ الْمَآبِ،میں اپنی ماں کو جنت میں دیکھ رہا ہوں۔ شیخ فرماتے ہیں : لَا فَعَلِمَتْ صِحَّۃَ ھٰذَا الْحَدِیْثِ بِصِحَّۃِ کَشْفِہٖ وَصِحَّۃَ کَشْفِہٖ بِصِحَّۃِ ھٰذَا الْحَدِیْث، میں نے اس حدیث کی صحت کو اس جوان کے کشف سے اور اس کے کشف کی صحت کو اس حدیث کی صحت سے دیکھ لیا، حدیث پر تو یقین پہلے ہی تھا لیکن اب اور بڑھ گیا ۔ اس لئے عرض کرتا ہوں کہ زندگی چند دن کی ہے۔ تو روزانہ لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ کی پانچ تسبیح پڑھ لیجئے، یہ پچیس منٹ میں پوری ہوجائیں گی۔ درمیان میں ، مُحَمَّدُ رَّسُوْلُ اللّٰہِ پڑھ لیجئے اور جب لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ شروع کیجئے تو یہ مراقبہ کیجئے کہ میری لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ عرشِ اعظم تک جارہی ہے ، کیونکہ بشارت دینے والے سید الانبیاء ﷺ ہیں جو صادق المصدوق ہیں، اصدق القائلین ہیں، ان سے بڑھ کر کون سچا ہوگا؟ ان کی بشار ت ہے کہ جب بندہ  لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ پڑھتا ہے تو  لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ لَیْسَ لَھَا حِجَابٌ دُوْنَ اللّٰہِ، اللہ تعالیٰ میں اور لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ  میں کوئی حجاب نہیں۔ جب یہ تصور ہوگا کہ میری ہر لَااِلٰہ اِلَّااللّٰہُ ،عرشِ اعظم تک جارہی ہے، اللہ تعالیٰ سے ملاقات کررہی ہے تو بتائیے  مزہ آئے گا یا نہیں؟  ہر پانچ ماہ بعد اپنے پیارے رشتہ داروں کو والدہ، والد، اولاد ، دادا دادی نانا نانی کو ستر ہزار مرتبہ کلمہ بخش سکتے ہیں 
Share This
Previous Post
Next Post

Friends, if you want to know about the country and the world, as you want to know and read Islamic Knowledge, Articles, True Stories, Health Tips, General Knowledge, and more, then you have come to the right website

0 Please Share a Your Opinion.:

Please Do not enter any spam link in the Comment box